سوال

Monday,8 May 2006
از :  
زمرات : پنجابی, میری زندگی, اردو

اگر کوئی انگریزی میں غلط تلفظ بولے تو تصحیح کرنے والا پڑھا لکھا، اور اگر کوئی پنجابی میں غلط تلفظ بولے تو تصحیح کرنے والا پینڈو کیوں؟

میرے سکھ دوست کے والدین جو پاکستان گئے ہوئے تھے واپس آ گئے ہیں اور آج ہم لوگ اُن سے ملنے گئے تھے کہ ان کو یاترا سے واپسی پر مبارکباد دے آئیں، لیکن وہاں انہوں نے پاکستان کی تعریفوں کے وہ پُل باندھ دیے کہ ہم میں سے کئی منہ میں انگلیاں ڈال لیں کہ واقعی پاکستان سے ہو کر آئے ہیں یا کہیں اور سے، حالانکہ ہم میں سے کچھ لوگوں کو اپنے آباء کی غلطیوں کا اب اندازہ ہو رہا ہے لیکن وہ کہہ رہے تھے کہ پاکستان بھارت سے کم از کم ٢٠ سال آگے ہے

تبصرہ جات

“سوال” پر 10 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. Khawar says:

    ان صاحبان كو ەندوستان چهوڑےعرصه هو چكا هو گا ـ اور اس كے علاوه انەوں نے صرف پنجاب كى بات هو گىـ
    انڈيا صرف پنجاب تكـ محدود نهيں ـ
    انڈيا ترقى كر رها هے ـ يه ايكـ حقيقت هے ـ اگر پاكستان اس بات كو تسليم نهيں كرے گاتو انڈيا كے مقابلے ميں ميدان ميں بهى نهيں اترے گا اور كبهى بهى ترقى نهيں كر سكے گا ـ

  2. جہانزيب says:

    بالکل خاور صاحب ان تعلق پنجاب سے ہی ہے، اور ایک رپورٹ کے مطابق پنجاب بھارت کی دوسری امیر ترین ریاست اور پنجابی بھارت کے اوسطاً امیر ترین باشندے ہیں، ویسے تو وہ لوگ اب چندی گڑھ میں رہتے ہیں جو کہ بذات خود بھارت کا ایک جدید طرز کا شہر ہے، ویسے بھی میں نے بھارت کی ترقی کی نفی نہیں کی ہے بلکہ میں نے پاکستان کی ترقی کی نفی کرنے والوں کی دلشکنی کی ہے، ویسے بھی محاورہ تو موجود ہے گھر کی مرغی دال برابر اور دور کے ڈھول سہانے

  3. urdudaaN says:

    جناب، صحیح لفظ “تصحیح” ھے، جو لفظ “صحیح” سے بنا ھے۔
    اب مجھے یہ علم نہیں کہ اردو کی تصحیح کرنے والا کیا کہلائے گا!
    🙂

  4. بدتمیز says:

    ویسے میرا خیال ہے کہ ان لوگوں کو حکومت سے پیسے ملے ہونگے کہ بھائی جاو اور جہاں دو لوگ ملیں ہماری کارکردگی کی تعریفیے کرو
    اگر سنجیدہ ہو کر بات کی جائے تو ترقی تو ہو رہی ہے پر جس قیمت پر ہو رہی ہے ہو سب کو پتا ہے۔
    آپ نے اپنے ٹیمپلیٹ پر صرف گوگل ایڈ سینس کا ریفرر لگایا ہے اس کے بجائے چاروں ریفرر لگا لیں ان کے چھوٹے بٹن بھی ہیں وہاں پر

  5. شعیب صفدر says:

    پاکستان میں عوام معاشی طور پر بھارت کے مقابلہ میں بہتر ہے! اس میں کوئی شک شبہ نہیں! جو دوست احباب بھارت کا چکر لگا کر آئے ہیں وہ یہ ہی بتاتے ہیں!! اس کے علاوہ پاکستان میں شہروں میں کی حالت بھارت کے شہروں کی نسبت اچھی ہے، روڈ صاف ہیں ،عمارتیں خوب صورت ہیں، مگر اگر عالمی دنیا میں ملکی معاشی حالت دیکھے تو پچھلے چند سالوں میں بھارت پاکستان سے آگے نکل گیا ہے مگر عوام کی حالت بہتر نہیں ہوئی اس قدر!!!! جو وفود بھارت سے مختلف نوعیت کے پاکستان (کراچی) آتے ہیں وہ بھی پاکستان دیکھ کر حیران ہوتے ہیں، میرا دوست ایسی این جی اور میں ہے جو ایسے وفود کی میزبانی کا کام سرانجام دیتی ہے!!!!

  6. اجمل says:

    پہلے بات تصحيح کی ۔ پنجابی کی تصحيح کرنے والا ديہاتی اسلئے ہو گا کہ شہری پنجابی بولنا جہالت سمجھتے ہيں اِسی لئے وہ پنجابی زبان بھُول چکے ہيں ۔ آپ نے اُردو کے حال پر روشنی نہيں ڈالی ۔ تقريباً ايک دہائی سے اُردو کو بولنا يا اُردو کی کتاب کا حوالہ دينا بھی جہالت سمجھا جانے لگا ہے البتہ اُردو ميں انگريزی کے بے ڈھبّے پيوند لگے ہوں تو ٹھيک ہے ۔ اللہ ہميں حقيقتوں کو پہچاننے کی توفيق عطا فرمائے ۔

    اب پاکستان بمقابلہ بھارت ۔ يہ حقيقت ہے کہ اگر ہماری حکومتيں عوام کا مال اپنی جيبوں ميں بھرنے کی بجائے عوام پر خرچ کرتيں تو ہمارا مُلک اس وقت معاشی طاقت کی ايک مثال ہوتا ۔ حُکمرانوں اور چند خود غرض لوگوں کی لوُٹ مار کے باوجود يہ حال ہے کہ بھارت کئی ميدانوں ميں پاکستان سے آگے نہيں نکل سکا اور کُچھ ميں بہت پيچھے ہے ۔

    سوائے چند مخصوص پاکستانيوں کے تعليم سے ہماری حکومت اور عوام کی بے اعتنائی کا بھرپور فائدہ اُٹھاتے ہوئے پچھلے دس بارہ سال ميں بھارت اس ميدان ميں پاکستان سے بہت آگے نکل گيا ہے ۔

    کچھ مثاليں جن ميں بھارت بہت پيچھے ہے ۔ سڑکيں ۔ مکان ۔ کپڑا بنانے اور لکڑی کی صنعت ۔ دستکاری ۔ دفاعی پيداوار ۔ عوام کا طرزِ زندگی جس کی بنيادی وجہ مسلمانوں کا شيوہ ہے يعنی کم کمانے کے باوجود اچھا کھانا اچھا پہننا ۔ ايک چيز جو غيرملکيوں کو بہت متاثر کرتی ہے وہ ہمارا حسنِ سلوک ہے جو ہم اپنوں سے نہيں غيروں سے روا رکھتے ہيں ۔

  7. saad says:

    I’m totally agreed with Shoaib. We went to India but its a long time ago to meet my grands there. Whatever we see or what ever is pretended to be seen is totally different by their media. All that glamour is limited to certain areas in India. As compared to India, though we cant say, we are economically stable but the poverty level is too high in India and perhaps the reason it left behind by Europe or China. Frankly speaking, there is no respect for women there too. Same compartment is for women and men while getting in to the bus and stuff like.

  8. Anonymous says:

    umm…..sardar jee sahee kahtay hain…tum b pakistan aao gay tu andaza ho ga..yani lahore ki baat kar rahi hou….3/4saal mai yahan kafi farak aa giya hai…kiya aya hai tum hi batna…k tum nai kiya tabdeli mahsoos ki.

    lagda aa sadar jee nai kisay pakistani bachay nu computer use karday wakh laiyea hona..;P

    acha mai khawar sai itfaq karo ge…k waqae ju loog bahir rahtay hain jab kafi arsay baad pakistan aatay hain tu kahtay hain..oee pakistan tu kafi taraqiii kar giya hai.

    meray cousin aye hain…weo lahore ko dhekh kar asay kartay jesay….paindoo batiya dhekhnay lahore aye hovay hain…:p

    weo asay kartay hain jesay hum ko kuch pata hi nahi.

    lalah

  9. Anonymous says:

    acha ye bataoo gaoo mai rahnay walay ko paindo kiun kahtay hain?

    aur punjabi bholnay walay ko paindoo kiun kahtay hain………..ju kahtay hain weo khud complex ka shekar hotay hain.

    lalah

  10. Anonymous says:

    aur haan india mai khubsurtii dhenay ko buhat kam milty hai..aur waha ki goverment ameer hai awam ghareeb yaha..ulta chakar hai….goverment ghareeb aur awam ameer ..phir loog bhari bhari buildings dhekh kar lagta hai k pakistan kitni taraqii kar giya hai.

    aur india education mai aur technology mai hum sai buhat agay hai.

    lalah

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔