يونيسکو ہندی-اردو

Wednesday,28 September 2005
از :  
زمرات : پاکستان, اردو

يونيسکو کے مطابق ہندی-اردو دنيا ميں بولی جانے والی تيسری بڑی زبان ہے۔ جس کے بولنے والوں کی تعداد نو سو ملين يا نوے کروڑ ھے۔ پہلے درجے پر انگريزی اور چينی فائز ہيں جسکے بولنے والے ايک ارب کی تعداد ميں موجود ہيں۔ مجھے کافی حيرت ہوئی کيونکہ ميں ہسپانوی کو انگريزی اور چينی کے بعد بڑی زبان سمجھتا تھا۔ جبکہ ہسپانوی بولنے والے جو کہ تقريبا پورے جنوبی امريکہ ، ہسپانيہ اور افريقہ کے کچھ شمالی علاقوں ميں بستے ہيں کی مجموعی تعداد اردو-ہندی بولنے والوں کی تعداد کے تقريبا نصف يعنی چاليس کروڑ پچاس لاکھ ہے۔ مطلب بھارت پاکستان دو ممالک مل کر ہی تعداد ميں پورے جنوبی امريکہ ، ہسپانيہ اور الجزائر وغيرہ پر حاوی ہيں۔ يونيسکو کے مطابق دنيا کی آدھی آبادی صرف آٹھ زبانيں بولتی ہے۔اور ہر سال دنيا ميں دس زبانيں متروک ہو جاتی ہيں۔
ليکن کيا ہندی اور اردو ايک ہی زبان نہيں ہے؟ جسے ہم انگريزی Dialect يا اردو ميں شايد مختلف تلفظ کہہ سکتے ہيں مگر ايک عليحدہ زبان نہيں۔۔ يا جيسے اگر ہم ہسپانوی زبان ميں ديکھيں تو جمہوريہ ڈومينکن کا رہنے والا حال پوچھنے کے لئے que lo que کہے گا جبکہ عموما دوسرے ہسپانوی como estas کا استعمال کرتے ہيں مگر اس طرح مختلف انداز بيان سے وہ ايک مختلف زبان تو قرار نہيں دی جا سکتی۔ ويسے بھی ميرا خيال ہے کہ بھارت ميں جسے ہندی کہا جاتا ہے اس ميں نسبتا سنسکرت کے اردو کے الفاظ زيادہ شامل ہيں۔ سنسکرت کے الفاظ کی ملاوٹ بھی اردو کو ہندی نہيں بلکہ اور زيادہ اردو بناتی ہے جيسا کہ اردو کا مطلب ہی لشکری زبان ہے جو مختلف زبانوں کے ملاپ سے وجود ميں آئی ہے تو اسکو ہندی کا ايک الگ ليبل لگانے کی کيا ضرورت ہے۔

تبصرہ جات

“يونيسکو ہندی-اردو” پر 8 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. سا ئر ہ عنبر ین says:

    amazing

    nice post

  2. شعیب صفدر says:

    اردو اور ہندی الگ الگ زبان مانی جاتیں ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔رسم الخط پر بھی غور کرے۔۔۔

  3. جہانزيب says:

    جی شعيب رسم الخط عليحدہ ہونے سے زبان تو عليحدہ نہيں ہو جاتی نا۔ اب اگر دونوں کو رومن ميں لکھا جائے تو ايک ہی طرح ہو گی يا بولنے ميں بھی۔ جيسے اگر کوئی ايک شخص اردو ميں پانی مانگے گا تو ہندی والا بھی بالکل ويسے ہی پانی مانگے گا۔ تو عليحدگی کہاں ہے؟

  4. اجمل says:

    دراصل ہندی بذات خود کوئی زبان نہیں ہے ۔ آزادی سے پہلے ہندوستان کے باشندوں اور ان کی زبان دونوں کو بہت سے ملکوں میں ہندی کہا جاتا تھا ۔ ہندوستان کے اندر بھی مسلمان جسے اردو کہتے تھے ہندو عام طور پر اسے ہندی کہتے تھے اور کچھ ہندو اسے سنسکرت رسم الخط میں لکھتے تھے ۔ آزادی کے بعد پاکستان میں اردو میں عربی کے الفاط زیادہ شامل ہونے لگ گئے پھر انگریزی شامل ہونے لگی ۔ بھارت میں ہندی میں پہلے سنسکرت سے الفاظ شامل کئے گئے پھر لکھائی بھی سنسکرت کی طرح شروع کر دی گئی ۔ بیس سال سے زائد ہوۓ مجھے آل انڈیا ریڈیو سے خبروں میں کچھ الفاظ سمجھ نہ آۓ تو میں نے ایک انڈین ڈاکٹر سے جو انہی دنوں انڈیا سے آیا تھا مطلب پوچھا تو وہ بولا معلوم نہیں ۔ میں نے کہا یہ ہندی خبروں میں سنے ہیں تو کہنے لگا یہ ہندی نہیں ہے اور نہ یہ اکثریت کو سمجھ آتی ہے ۔

  5. urdudaaN says:

    يكجا يعنى غير منقسِم هندوستان ميں عام بولى ڈائِليكٹ “كھڑى بولى” ھوا كرتى تھى، جو سنسكرت زده زبان “هندى” سے قدرے مختلف تهى، ليكن سنسكرت سے ماخوذ تهى۔
    اِسميں صرف سليس يعنى آسان ترين حروف كا تلفّظ استعمال هوتا تها، ليكن بولياں لكهى نہيں جاتيں۔
    يہى اردو كى اصلى ماں هے۔ اِسميں سنسكرت كے “دَكشِن” كو “دكّن” اور “پُوروَ” كو “پورب” كہا جاتا تها۔
    جب اِس كو فارسى رسم الخط، جسميں عربى كى بَنِسبت چ، پ، گ زائد تهے، ميں لكها گيا تو ٹ، ڑ، ڈ، دھ، گھ، چھ، ٹھ جيسے اضافے كئے گئے۔
    لہٰذا اب اِس حروفِ تہحجّى ميں عربى اور فارسى سے كئى ذياده حروف تهے۔
    ليكن اُسى وقت هندى يعنى ديوناگرى رسمُ الخط ميں ف، ق، غ كا اضافہ نہيں هُوا۔

    اب جبكہ اردو والوں نے اپنى حُبّ الوطنى ظاهر كرنے كى ٹهان لى هے، اردو كو ديوناگرى رسمُ الخط ميں لكهنے كى كوشش جارى هے۔ جِسكے لئے ف، ق، غ حروف بنائے گئے هيں۔

    يہ كوئى مسئلہ نہيں بلكہ اُردو كيلئے اچهّا هوتا، ليكن قباحت يہ هيكہ ديوناگرى ميں لكهى اردو كو “ھندى” كہہ ديا جاتا هے جو قابل قبول نہيں هے۔ اور يہى بات اردو فلموں كو “هندى” بناتى هے۔
    كيا ھندى كو رومن ميں لكهنے سے وە انگريزى بن جائيگى؟

  6. SHUAIB says:

    اطلاع کیلئے عرض ہے ؛
    یہاں امارات میں فلپائنی، جاپانی، چینی؛ یوروپی؛ امریکی؛ عربی؛ کوریائی اور روسی وغیرہ وغیرہ سارے کے سارے عام اردو بول چال اچھی طرح جانتے ہیں اور یہاں کے بازاروں میں بھی ہر جگہ اردو کا استعمال عام ہے ۔

  7. جہانزيب says:

    اردودان آپکی معلومات کے لئے شکر گزار ھوں۔ اور شعيب صرف امارات ميں ھی نہيں دنيا ميں اور بہت سے ممالک ميں بہت سے لوگ اردو کو جانتے ھيں اور اس ميں بات بھی کر ليتے ھيں مگر جب زبان دانوں کی گنتی کی جاتی ھے تو ان کو شمار نہيں کيا جاتا۔۔ اس کی مثال ميں اپنی دوں گا کہ ميں روزمرہ استعمال ہونے والی ہسپانوی بول اور سمجھ ليتا ھوں ليکن جب ہسپانوی زبان بولنے والوں کا شمار ہو گا تو مجھے اور ميرے جيسے بہت سے دوسرے لوگوں کو اس ميں شامل نہيں کيا جائے گا

  8. اگر آپ اردو اور ھندی کا موازنہ کرنا چاہتے ہیں تو
    http://www.urdu123.com/hindi2urdu
    اس سائٹ پر جا کر بی بی چی ہندی کو اردو میں دیکھیں۔

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔