ماں

Tuesday,10 May 2005
از :  
زمرات : میری پسند, موسیقی, اردو

مجھےيہ پوری نظم مل گئی ہے اور اسکے ليے ميں ذيشان بھائی کا مشکور ہوں۔اسکو نديم کاظمی نے گايا ہے يہاں پوری نظم لکھ رہا ہوں

اے ماں پياری ماں
اپنے قدموں ميں دے دے جگہ
اپنا سايا بنا لے مجھے
اپنے نغمے سکھا دے مجھے

دير جب بھی ہوئی گھر ميں آتے مجھے
ميں نے ديکھا کہ ماں ميری سوئی نہيں
ميرے خون کا ہر اک قطرہ يہ کہہ اتھا
ميری ماں تم سے بڑھ کر کے کوئی نہيں
آ گلے سے لگا لے مجھے
اپنے من ميں جگہ دے مجھے
ماں پياری ماں

جب بھی کوئی پريشانی مجھ کو ہوئی
تيرے آنچل تلے آ کے رويا ہوں ميں
تيری باتوں کی ڈوری کو تھامے ہوئے
تيری گودی پہ سر رکھ کے سويا ہوں ميں
کوئی لوری سُنا دے مجھے
آج پھر آسرا دے مجھے
ماں پياری ماں

تيری ہر ايک دُعا مجھ پہ مرکوز تھی
تو نے ہر دم مجھے خوش رکھا ہے مگر
ميں نے تجھ کو کئی غم دئے ہيں نا ماں
اپنے بيٹے کو کر دےنا تو درگذر
چاہے کوئی سزا دے مجھے
پر ہر ايک لمحہ دُعا دے مجھے

اے ماں پياری ماں
اپنے قدموں ميں دے دے جگہ
اپنا سايا بنا لے مجھے
اپنے نغمے سکھا دے مجھے

تبصرہ جات

“ماں” پر 6 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. Anonymous says:

    nip bhai.,…shuker hy mil gye……or xeon bhai ko zabani ati thee kia??

  2. Zeeast says:

    buhaat khubsooret lefz hein……

  3. Anonymous says:

    Marvelous,

    Maa JI the only matchless gift by ALLAH ……………

    She is my only love and I hope the other’s also…….

  4. Zeeast says:

    buhaat khubsooret lefz hein…..

  5. Anonymous says:

    «¤°§Úþërb m® jåhåhzåïb°¤»

    miss müghul¤

  6. جہانزيب says:

    ہاں جی بول بھی اچھے ہيں اور گايا بھی اچھا ہے۔

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔