بُنياد پرستی اور انتہا پسندی؟

Tuesday,5 July 2005
از :  
زمرات : پاکستان, مذہب, امریکہ

آج کل اخبارات سے لے کر ٹی وی ہر جگہ جہاں ديکھو ايک ہی بات يا ان مخصوص الفاظ کی تکرار سُننے کو اور پڑھنے کو ملتی ہے۔ تو بنياد پرستی کيا ہے؟ انتہا پسندی کيا ہے؟پہلے تو ميں بُنياد پرستی سے آغاز کرتا ہوں۔ کيا بُنياد پرستی بُری ہے؟ يا بلکے بُنياد پرستی ہے کيا؟ميرے خيال ميں تو کسی بھی چيز کے بُنيادی اصول جس پر اس چيز کی اساس ہوتی ہے کو بنياد کہتے ہيں جسے انگلش ميں “بيس” کہتے ہيں يا ابتدائی اصول۔ تو کسی بھی علم يا چيز کو مکمل طور پر جاننے کے ليے اسکے بارے ميں ابتدائی معلومات کا ہونا ازحد ضروری ہے مثلا علم رياضی ميں ابتدا ہندسوں سے ہوتی ہے مطلب ہندسہ علم رياضی کی بنياد ہے تو بغير ہندسہ کو جانے ہم رياضی ميں مہارت حاصل کر سکتے ہيں؟ بلکے جس شخص کو ابتدائی اصولوں ميں مہارت حاصل ہو کسی قسم کا ابہام نا ہو تو وہ اسکی مدد کرتے ہيں باقی درجوں ميں ۔ تو پھر جب کسی دوسرے علم کی بنياد کو جاننا ايک اچھی بات سمجھی جاتی ہے تو پھر مذہب کے بارے ميں ايسا رويہ کيوں اختيار کيا جاتا ہے کہ فلاں شخص بنياد پرست ہے؟کہيں نعوذ باللہ اسکا مطلب يہ تو نہيں بنتا کہ ہمارے مذہب کی بنياد ہی غلط ہے؟تو اگر جس مذہب کی بنياد ہی غلط ہو جس کے ابتدائی اصولوں پر کارفرما ہونے کو ايک طعنے کی صورت ميں بيان کيا جائے جيسے کوئی جرم ہے تو اس سے يہ مطلب نہيں نکلتا کہ پورا مذہب ہی غلط ہے؟اور جب ہم ميں سے خود بہت سے لوگ بنياد پرستی کو غلط کہہ رہے ہوتے ہيں تو مطلب تو ابتدئی اصولوں کو غلط کہہ رہے ہوتے ہيں يہ جانتے بھی کہ نعوذباللہ ايک غلط مذہب کے پيروکار ہيں کھل کر اعلان کيوں نہيں کر ديتے ہيں کہ ہم اس مذہب سے باز آئے؟ يہ دوغلا پن کس ليے کہ ہم مسلمان ہيں ليکن بنياد پرست نہیں؟ميں مسلمان ہوں اور بنياد پرست ہوں اُن تمام اصولوں کو اٹل مانتا ہوں جو قرآن ميں ہيں جو اللہ کے رسول کی سُنت ميں ہيں اور ايسا کہنے ميں مجھے کوئی شرم نہيں ہے۔ ہم ايسا کيوں نہيں کہہ سکتے ہيں؟اور دوسری بات کہ مذہب کو مذہب کے ماننے والوں سے جانچنا اور ان جاننے والوں کے کاموں کو ديکھ کر کہنا کہ ہميں اسلام ميں تبديلی کرنا چاہيے؟مگر کس قسم کی تبديلی؟يا دوسرے الفاظ ميں تبديلی يا بہتری اُس چيز ميں ہوتی ہے جس ميں کوئی نقص ہو۔جبکہ ايک مسلمان کی حثيت سے کيا ہمارا يقين نہيں ہے کہ دين اسلام کو مکمل کر ديا گيا ہے؟چليں ہم مانتے ہيں کہ دين ميں بہتری کی گنجايش ہے؟ تو اسکا مطلب يہ نہيں نکلتا کہ جس نے دين اُتارا ہے اُسکے اصول بنائے ہيں اس سے مطلب خدا سے سقم رہ گئے ہيں جن کو بہتر کرنے کی گنجائش ہے۔يا جيسے آج کل کہا جاتا ہے کہ اس دور کے حساب سے تبديلياں کرنے کی ضرورت ہے؟ مطلب کہ نعوذ باللہ اللہ کو انسانوں کے رويے اور بدلتے حالات کا اندازہ نہيں تھا جس کا ادراک ہميں آج ہو رہا ہے؟ تو مطلب خدا سے غلطياں ہوئيں؟جيسے آپ سے اور مجھ سے ہوتی ہيں؟ تو کيا اس سے يہ مطلب نہيں نکلتا کہ خدا ہی کامل نہيں ہے؟ تو آپ ايسے خدا کی عبادت کيوں کريں؟
ہاں انتہا پسندی ؟ جو لوگ بھی انتہا پسندی کو اسلام سے جوڑتے ہيں مجھے انتہا پسندی کا اسلام سے ناتا جوڑ کر بتانا پسند کريں گے؟ کيا اسلام يہ نہيں کہتا ” ميانہ روی اختيار کرو” اور ” زمين پر اکڑ اکڑ کر مت چلو”

کہہ “کيا تم ہم سے اللہ کے بارے ميں جھگڑاکرتے ہو جبکہ وہ ہمارا رب بھی ہے اور تمہارا رب بھی۔ اور ہمارے عمل ہمارے ہمارے لئے ہيں اور تمہارے عمل تمہارے ليے، اور ہم خالص اسی کے ہيں (سُورہء بقرہ آيت ١٣٩ )۔

تبصرہ جات

“بُنياد پرستی اور انتہا پسندی؟” پر 9 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. Anonymous says:

    Great  Post 

    Posted by Shoiab Safdar

  2. Anonymous says:

    Sorry for not posting in Urdu. My computer is not working and I can’t install Urdu support on this one.

    I think you are ignoring the whole history of the term “fundamentalism.” It arose in the early 20th century US with respect to what is referred to as the fundamentalist-modernist divide in the Protestant churches here. From that time, there is a development in the usage of the term “fundamentalist”. I don’t think it is as simple and clear as going back to basics. The use of “fundamentalist” for Muslim groups nowadays is actually discouraged by some scholars because Islamic thought has developed quite differently from Christian one. 

    Posted by Zack

  3. Anonymous says:

    Muslims are so confused not only with non Muslims. They are also confused each other. We got different groups and every group think that they r right. If one group said your not right then that group mention they r “non-Muslim”. As my personal experience at some point one Muslim can ask which groups are you belong to “Hanfi”.., “Alhle Hadees” “Shia” or “Ahele Sunnat” or what ever. if you are talking about FUNDAMENTALISAM then which fundamental are you following. I m a muslim and paksitani, In pakistan muslims r killing each other specially on religious occasions. Now Pakistan is also facing suicide bombers, even they blast their self in mosque. I just wanna ask is Americans trained them to blast them self. Let me write it’s so easy to blame some one. If every Muslims have different fundamentals then which one is a Islamic fundamentals. I m not a Islamic scholar but I believe that Islam has their own fundamentals but islam is not based on fundamentals.. Islam is based on facts and his fundamentals are based on facts.

    I will write a post on this …. Soon (Inshallah)
     

    Posted by shaper

  4. Anonymous says:

    زکريا بھائی اس بات سے انکار نہيں کہ لفظ بنياد پرست کو بيسويں صدی کے آغاز ميں عيسائت کے پيروکاروں نے استعمال کيا تھا۔ اور اس بات پر بھی ميں بحث نہيں کر رہا ہوں کہ مغرب ميں پہلے اس اصطلاح کو مسلمانوں بلکے دہشت گردوں جو کہ اپنے آپ کو مسلمان کہتے ہيں کے لئے اتعمال کيا گيا بعد ميں اُسی کی جگہ انتہا پسند استعمال کيا جانے لگا۔ بلکہ ميں تو اپنی بات کر رہا ہوں اپنے گھر کی کہ جو لوگ مسلمان کہتے ہيں اپنے آپ کو اور زيادہ تر پڑھا لکھا طبقہ بڑے فخر سے ايسا کہہ کر اپنے آپ کو جديد ثابت کرنے کی کوششوں ميں ہيں۔ اُن سے کہنا ہے کہ کيا اسلام کی تعليمات واقعی انتہا پسندی کو فروغ ديتی ہيں جبکہ ” تم ميں سے اللہ کے نزديک وہ زيادہ قريب ہے جو زيادہ پرہيز گار ہے” جہاں تک ميرا ذاتی خيال ہے کہ اسلام کی تعليمات کی انتہا سے انسان ميں عاجزی اور انکساری پيدا ہوتی ہے۔مگر مسلہ يہ ہے کہ ہم نے دين کو سمجھا نہيں مگر لوگوں کے رويوں کو ديکھ کر اپنی رائے بجائے ان لوگوں کے اعمال کی ديں مذہب کے بارے ميں بولنا شروڎ ہو جاتے ہيں۔
    اور شيپر مسلمان اس وقت دوغلے پن کا شکار ہيں کہ آيا اسلامی اصولوں کو اپنايا جائے ترقی کے ليے يا مغربی اقدار کو؟ اور حالت يہ ہو گئی ہے کہ ” کوا چلا ہنس کی چال اپنی بھی بھول گيا” نا ادھر کے رہے نا ادھر کے۔ يا تو کھل کر مغربی اقدار کو اپنا ليں يا اسلام کے اصولوں کو تو اس سے بہت سے مسائل حل ہو جائيں گے ہم اس وقت درميان ميں ہيں کہ ايسا کريں گے تو دنيا والے کيا کہيں گے۔
    اللہ حافظ 

    Posted by jahanzaib

  5. Anonymous says:

    السلام علیکم جہانزیب اشرف
    آپ نے بہت اچھا عنوان چنا ہے انشاءاللہ جلد میں آپ کا ساتھ دوں گا ۔
    میں بھی اپنے آپ کو بنیاد پرست کہتا ہوں اور سمجھتا ہوں کہ جو بنیاد پرست نہیں وہ قابل اعتماد نہیں
    ہم لوگ فیشن پرست بن چکے ہیں اور نعوذباللہ اپنی قابلیت کو پیدا کرنے والے کی قابلیت سے زیادہ سمجھتے ہیں ۔ یہ ہماری خام خیالی ہے ۔ یہ کوئی نئی بات نہیں ۔ پہلے بھی ایسی قومیں آئیں جو اپنی ترقی پر نازاں ہوئیں اور پھر اپنی ترقی سمیت تباہ ہو گئیں ۔ 

    Posted by Iftikhar Ajmal Bhopal

  6. Anonymous says:

    umm….Mr jahann…….good topic…..intha pasandiiii……dhakay app kah rahay hain…kuch muslmaan intha pasand hain….u mean …Alqaida……tu weo muslmaano pay honay walay badlay ka juwab b na dai….islam tu kahta hai zulam ka badla zulm…..insaaniyeat pay zulam kisi b sata pay ho zulam hi kahlata hai……1857 ki jang azadi k baad 6lakh mulamaan ka katal hova…aur sirf 3dino mai 52hazar olma ko phansee pay latkaya giya….kal ki baat na sahii ajj poori dhuniyea muslmaanoo k heelaf hai…….kashmir..aghfanistan…bosinia..aur india mai muslamaano pay zulam..oun ka kiya kasoor hai
    haan 9/11 mai kuch gooray mar gay tu madia nai ouss ko abbi b permote kar rahay hain….
    abb london mai….bombz dhamkay hovay tu….halchal mach gayi….ju haazraoo muslim betiyu ki eztay majro ki jaty hain..oun ka kiya……abb koi app ko maray aur kahay cheehoo pay na tu….Mr jahan….app kasay kah sanktay hain…k weo inha pasand hain

    wasay baad mai history k kuch parts app sai shair karoo gee…k muslims nai kitna bhardhasht kiya hai…okay bye

    talk to later

    miss mughal 

    Posted by Anonymous

  7. Anonymous says:

    جی اجمل انکل آپ ضرور لکھیں اس پر کچھ مجھے تو لکھنے کا اسلوب نہیں آتا مگر آپ کا انداز بہت اچھا ہے۔
    مس مغل۔ بدلہ لینے کا حق تو ہے مگر ظلم کرنے والوں سے۔یہ نہیں کہ ظلم کوئی کرے اور خمیازہ بے گناہ بھگتیں۔اور میں کسی مغربی ملک کی بات نہیں کر رھا تھا وہ اگر ایسا کہیں تو کوئی بات نہیں کیونکہ انکو اسلام کی تعلیمات کا پتا نہیں ہے۔میں بات انکی کر رہا ھوں جو مسلمان ہیں اور ایسا کہتے ہیں۔
    اب آپس کی بات کیسی ھو؟ اور ہاں انگریزوں نے مغلوں پر بہت ظلم کیے ھیں :P 

    Posted by جہانزیب

  8. Anonymous says:

    hehe…ji lakin mughal apnay shughloo ki wajah sai yaha thak pochchay hain…..:p

    mess_mughal 

    Posted by Anonymous

  9. Anonymous says:

    fgfdgfdgdffd 

    Posted Anonymous

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔