انتظار ختم۔

October 22, 2008
از :  
زمرات: اردو

اردو اور خطِ نستعلیق کا چولی دامن کا ساتھ ہے، بد قسمتی سے ابھی تک ویب کے لئے کوئی بھی قابلِ عمل نستعلیق خط مروج نہیں ہو سکا۔ بعض اوقات جب کوئی جاننے والا میرا بلاگ دیکھتا ہے، تو اُس کا پہلا سوال یہی ہوتا ہے، کہ جیسی اردو ہم پاکستان میں لکھتے ہیں یہ ویسی کیوں نہیں، یہ تو عربی کی طرح ہے ، اور میرا جواب ہوتا تھا کہ فی الحال مجبوری ہے۔ بی بی سی اردو کا خطِ نسخ چاہے کتنا ہی بھدا کیوں نہ ہو، ایک بات کا میں معترف رہا ہوں کہ کم از کم اردو ویب پر یہ خط ایک سنگِ میل کی حثیت رکھتا ہے۔

علوی نستعلیق سکرین شاٹ

ایسی بات نہیں کہ اردو والوں نے نستعلیق کو اپنانے کی کوشش نہیں ہے، کرلپ والوں کا نفیس نستعلیق آیا، اسی طرح فجر نوری نستعلیق ، اور ماشااللہ اپنی حکومتِ پاکستان کی طرف سے پاک نستعلیق بھی منظر عام پر آیا، لیکن خامیوں کے سبب مقبولیت کا درجہ حاصل نہیں کر پائے، اپنے ظہور احمد سولنگی بھائی نے تو پاک نستعلیق کے نظارے کروا کروا کر شوق کو خوب مہمیز کرنے کے بعد چپ سادھ لی، بعد میں معلوم ہوا کہ خطِ نستعلیق بھی سرخ فیتے کا شکار ہو کر کسی وزیرِ با تدبیر کا انتظار کرتا رہ گیا کہ جناب آئیں اور قینچی چلائیں ۔ بعد اس کے جو کچھ پاکستان میں سیاسی سطح پر ہوا وہ اب تاریخ کا حصہ ہے، مجھے تو لگتا ہے یہ سب کچھ پاک نستعلیق کو رکوانے کے لئے پرویز مشرف کو ہٹایا گیا ہے ۔خیر ظہور احمد سولنگی کی جانب سے دکھائے گئے نظارے دیکھنے کے بعد میں نے نئے سرے سے ایک عدد تھیم تیار کیا کہ نستعلیق کے ساتھ استعمال کروں گا، عید کا وعدہ کیا گیا تھا، اور نہ جانے کتنی عیدیں گزر گئی ہیں ۔
پھر امجد علوی صاحب کافی عرصہ سے اردو محفل پر ایک قابل عمل خطِ نستعلیق کا ذکر کرتے رہتے تھے، اور میں چوری چوری دیکھ لیتا تھا کہ خط تیاری کے کن مراحل تک پہنچ گیا ہے، آج محفل پر گیا تو القلم والے شاکر القادری صاحب کی طرف سے کسی خوشخبری کا اعلان کیا گیا ہے، لیکن خوشخبری کس خبر کی ہے، اس کا اندازہ لگانا ہے۔ ہمارے خبرو کی طرف سے معلوم ہوا ہے کہ جلد ہی یعنی کل بروزِ جمعہ علوی نستعلیق میدان میں آ جائے گا اور اردو کمیونٹی کا دیرینہ خواب تکمیل کو پہنچ جائے گا۔
علوی نستعلیق کے آنے کے بعد اس بلاگ کا مجوزہ خط بھی علوی نستعلیق میں بدل دیا جائے گا، اور ایسا کرنے کی درخواست تمام یونی کوڈ اردو کو اپنانے والوں سے بھی کروں گا، تا کہ جلد ہی خط نستعلیق ویب پر اپنا مقام حاصل کر لے ۔