لیزی لِبرا

Thursday,13 December 2007
از :  
زمرات : میری زندگی

اپنی خامیاں بتانا بڑا مشکل کام ہوتا ہے، کیونکہ ہر کوئی اپنے آپ کو مسٹر پرفیکٹ نہیں تو اُس کے قریب ضرور سمجھتا ہے ۔ لیکن کچھ ظاہراً خامیاں ایسی ہوتی ہیں جو وقتاً فوقتاً سامنے آتی رہتی ہیں ۔ میں اپنے بارے میں بہت کم لوگوں کے سامنے رائے دیتا ہوں، خاص طور پر انٹرنیٹ پر تو میں اپنے بارے میں کوئی بھی چیز جِس کا تعلق کسی بھی حوالے سے میری ذات سے ہو کو پبلک نہیں کرتا ، آج میں اپنی ایک ایسی خامی کا اظہار کرنا چاہتا ہوں، جِس کے متاثرین میں تقریباً میرے سب جاننے والے شامل ہیں ۔
آئی ایم ناٹ گُڈ ایٹ کیپنگ کانٹیکٹس۔ یہ مسلہ اتنا سادہ نہیں ہے جتنا نظر آ رہا ہے۔ اگر آپ میرے پاس ہیں تو میں اپنا تمام وقت بخوشی آپ کو دے سکتا ہوں اور اس بات میں کوئی مظائقہ نہیں سمجھتا لیکن آپ مجھ سے ذرا بھی دُور ہو جائیں اور یہ توقع رکھیں کہ میں خود رابطہ کروں گا تو ایسا بھی نہیں ہو گا بلکہ اس کے بر عکس ایسا بھی ہو سکتا ہے کہ آپ خود ہی مجھ سے رابطہ کریں میں تب بھی جواب نہیں دوں۔ اس رویے کے سبب میں نے اپنے بہت سے دوستوں کو ناراض کیا ہے اور لوگ ایسا سمجھتے ہیں کہ مجھے کوئی پرواہ نہیں، لیکن آئی ڈوو کئیر، بس میں رابطے رکھنے میں اتنا اچھا نہیں ہوں۔ اور اتنا بُرا ہوں کہ آپ میرا فون کسی بھی وقت اُٹھا کر دیکھ لیں اُس میں بیس سے پچیس وائس میل ہر وقت موجود رہتی ہیں، جنہیں کبھی میں دو ہفتے بعد تو کبھی مہینے بھر بعد دل کرے تو سُن لیتا ہوں ۔ میرے دوستوں کے مطابق جب کوئی فون کا جواب نہیں دیتا تو تب اُن کو میں یاد آ جاتا ہوں ۔
لیکن اب میں کاغذات میں سِنگل کے رُتبے پر فائز نہیں رہا، ماشااللہ شادی شدہ ہوں، لیکن میری شادی ابھی صرف فون کے رابطوں تک ہی مُنحصر ہے، اِس لئے میں اِسے “فونی میرج” بھی کہہ دیتا ہوں ۔ میری بیگم یونیورسٹی میں نہ صرف پڑھتی ہے بلکہ پڑھاتی بھی ہے، اِس لئے فون کرنے کے لئے پہلے مُجھے پُورا پوُرا حساب کرنا پڑتا ہے کہ ابھی وہ کلاس میں ہو گی، ابھی پڑھا رہی ہو گی اور حساب کرتے کرتے کئی کئی دن گزر جاتے ہیں، تب ایک دن ہماری گِلہ شکوہ سے بھرپور بات چیت ہو جاتی ہے، اور بھر دوبارہ وہی روٹین ۔آئی مین کیا کسی کو پتہ ہے بیگم کو راضی کرنا بڑا مشکل کام ہوتا ہے ۔ لیکن خیر ہے۔
لیکن مجھے اپنے دوستوں سے صرف ایک بات کہنا ہے کہ اگر میں آپ سے رابطہ نہیں کرتا، آپ کے رابطوں کا بروقت جواب نہیں دے سکتا، پلیز پلیز یہ مت سمجھا کریں کہ آئی ڈوونٹ کئیر، یا یہ کہ میں کسی بات پر ناراض ہوں؟ کیونکہ ناراض ہو کر میں کم ہی چُپ رہتا ہوں ۔ اس وجہ سے اپنے ذہن میں کوئی غلط فہمی یا فہمیاں پیدا نہ کریں ۔ زیادہ تر یہ میری سُستی کی وجہ سے ہوتا ہے نہ کہ ناراضگی کی وجہ سے ۔ ویسے بھی میں لِبرا ہوں اور لیزی لِبرا کی ٹرم ویسے بھی کافی مشہور ہے ۔

تبصرہ جات

“لیزی لِبرا” پر 6 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. بدتمیز says:

    آپ میرا فون کسی بھی وقت اُٹھا کر دیکھ لیں
    ————————————–
    بیگم کا حق ایسے نہ بانٹتے پھریں اس پر بھی لڑائی ہو سکتی ہے۔
    وہ ابھی تک پڑھا رہی ہیں۔ دسمبر تو آ گیا میں تو سمجھ رہا تھا آپ بستہ سنبھالنے کی تیاریوں میں‌ہونگے۔
    چلیں سی یو ان نیویارک

  2. درست فرمایا. میرے دوستوں کو بھی شکوہ رہتا ہے کہ میں ان کے ایس ایم ایس کا بھی جواب نہیں دیتا. مجھے تو غیرت دلانے کی ناکام کوشش کی جاتی ہے. لیکن مجال ہے کہ انھیں جواب میں ایک عدد مس کال ہی کردوں.

  3. یار دوستوں تک تو ٹھیک ہے!! مگر کوشش کرو یہ فونی میرج متاثر نہ ہو!!
    بھابی اب جون پر تمھاری پٹائی تو نہیں کر سکتی ناں!!

  4. ہماری بات ہوئے کتنا عرصہ ہو گیا ہے بھلا؟

  5. بدتمیز says:

    قدیر اگر آپ خود فون کر سکیں تو جب مرضی کیا کریں لیکن چونکہ آپ نے کہنا ہی اگلے کو ہوتا ہے لہذا اب یہ اگلے پر ہے کہ وہ کتنے عرصے بعد آپ کی کاں کاں سنتا ہے.

  6. لالااھ says:

    mashallah…..kitni acchi baatin bata rahe hain…Mr nip…..oustaani jee ko aney de sab theak ho jaye ga….waise main ne urdu mein bhi likhne ki nakam koshish ki hai..lakin..sigh

    lalah

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔