قسمت

Sunday,30 October 2005
از :  
زمرات : میری زندگی, امریکہ, سیاست

قسمت کيا ہے؟ اس بات کو جاننے کا انسان ہميشہ سے متجسی رہا ہے کہ آنے والے وقت ميں اسکے حالات کيا ہوں گے، کبھی وہ کسی کو اپنا ہاتھ دکھا کر معلوم کر رہا ہے، کبھی کوئی طوطا آنے والے وقت کے بارے بتا رہا ہوتا ہے، لوگ کارڈ پڑھ کر يا زائچہ نکلوا کر آنے والے وقت کے بارے ميں سب جان لينا چاہتے ہيں اور اسی بنياد پر کئی لوگوں کی روزی روٹی لگی ہوئی ہے۔
بہت سے لوگ قسمت اور پيسے کو آپس ميں جوڑ ديتے ہيں مثلا اگر کوئی بتائے کہ تمہاری قسمت بہت اچھی ہے تو اسکا مطلب يہی اخذ کرتے ہيں کہ پيسہ بہت ہے۔ ميرا ايک دوست ہے سيد حنان حيدر نقوی جس کا تعلق اسلام آباد سے ہے، اس کو دست شناسی کا بہت شوق تھا اور اس پر اس نے حد سے زيادہ کتابيں پڑھ رکھی تھيں، ( مطالعہ کا اسے بہت شوق تھا اور ہر وقت کچھ نا کچھ پڑھتا رہتا تھا، اسکے ساتھ ساتھ وہ ايک مصور تھا، اور کئی نمائيشوں ميں انعامات جيت چکا تھا جس ميں جاپان بھی شامل ہے) , تو جب ہم لوگ کراچی ميں رہتے تھے ہم نے ڈيفنس ميں لگنے والے کئی نمائشوں ميں ( fun fairs ) ميں اپنے سٹال لگائے تھے جس ميں ہاتھ ديکھ کر قسمت کا حال بتايا جاتا تھا اور دوسرے ميں حنان لوگوں کے پورٹريٹ بناتا تھا، کتنے لوگ بے وقوف بنتے تھے وہ ايک عليحدہ بات ہے، تو حنان قسمت اور پيسے کے فوق کو يوں بيان کرتا تھا ” قسمت يہ نہيں ہے کہ آپ کے پاس پيسا ہو بلکہ يہ ہے کہ ايک جگہ دھماکہ ہوتا ہے اور آپ وہاں سے ايک منٹ پہلے نکل جاتے ہيں يہ قسمت ہے”۔
اب يہاں ايک عورت جس کا نام کرسٹينا گُوڈناؤ ہے نے ايک لاٹری کا ٹکٹ خريدا اور اسی ٹکٹ پر دس لاکھ ڈالر کا انعام نکل آيا، مگر اسکے لئے يہ خوش قسمتی ايک بدقسمتی ميں بدل گئی اور اب بجائے پيسوں کے اُسے جيل کا منہ ديکھنا پڑے گا۔ ہوا يوں کہ جس کريڈٹ کارڈ سے اس نے لاٹری کا ٹکٹ خريدا تھا جس کی قيمت ايک ڈالر ہوتی ہے وہ ايک چرايا گيا کريڈٹ کارڈ تھا، کريڈٹ کارڈ کرسٹينا کے ايک رشتہ دار کا تھا جس کا انتقال پچھلے سال ہو چکا ہے اور اب اُس کو شناخت کی چوری کے مقدمات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ مطلب پيسہ آيا بھی مگر ملا نہيں بلکے زخمت بن گيا۔ اس خبر کو يہاں پڑھ سکتے ہيں۔
اب امريکہ ميں آج کل حکومت ميں جھوٹی رپورٹوں کا پلندہ کھلنے پر ايک تھرتھلی مچی ہوئی ہے، جس ميں ظاہر ہوا ہے کہ امريکہ نے جن وجوہات کی بناء پر عراق پر حملہ کيا تھا وہ وجوہات موجود ہی نہيں تھيں جن ميں افزودہ يورنيم کی خريد اور بڑے پيمانے پر تباہی پھيلانے والے ہتھيار شامل ہيں۔ ابھی تو اسکا آغاز ہوا ہے اور دو لوگوں کے استعفی کے بعد اب ڈِک چينی پر دباؤ ہے، مگر اب اس سب کا فائدہ کيا ہے؟ جن لوگوں کی اس نام نہاد دہشت گردی کے خلاف جنگ ميں جان گئی کيا ان کی زندگی واپس آ جائے گی؟ جس طرح صدام کو ١٣٦ لوگوں کے قتل کا سامنا ہے کيا بُش انتظاميہ کو اُنکی دہشت گردی پر مقدمات کا سامنا کرنا ہو گا؟ ليکن قانون صرف کمزوروں کے لئے ہوتے ہيں تو ايسا کچھ ہونے کی اميد نہيں ہے۔
ہمارے آج وقت کی سوئيوں کو ايک گھنٹہ پيچھے گھما ديا گيا ہے، بيٹھے بيٹھے ايک گھنٹہ پيچھے ہو گئے، اور کل گھر والوں نے بہت کام کروايا ہے، ہم نے اپنے پورے کمروں کی ترتيب بدل دی ہے اور ابھی ايک کمرہ رہ گيا ہے جس کو آج کے وعدے پر کل جان چھوٹی تھی ابھی ميں سحری کر رہا ہوں اس کے بعد سے کام پر لگ جاؤ، اس سے پہلے ميری امی مجھے غصے سے آ کر کہيں ميں خود ہی جا رہا ہوں۔ اس سب ميں مجھے جو اچھا نہيں لگا وہ ميرے کمپيوٹر کی جگہ تبديل کرنا ہے مجھے پچھلے دو سال سے عادت تھی اسی ايک جگہ پر بيٹھنے کی اور آج دوسری جگہ بڑا عجيب لگ رہا ہے، ذرا حالات ميرے قابو میں آ جائيں ميں دوبارہ کمپيوٹر وہيں لے جاؤں گا ۔۔
فی امان اللہ

تبصرہ جات

“قسمت” پر 5 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. Shirazi says:

    URL changed. Thanks for pointing out.

  2. F M says:

    “Meri to Kismat phoot Gayee”
    “Meri to Kismat He Kharab Hay”
    Yeh sab and aisi or bhi bohat see batain hain jo Insaan Ko kismat k baray main poochnay per majboor kertee hain…
    Laikin He( Allah ) Knows better no one can predict about this.
    Anyways thanx for the comments on my site
    and I think Woh poem”Faisla” Amjad Islam Amjad ki hay.
    I m not sure…

  3. Jawwad says:

    aaway ka aawaa he bigra hua hay 🙂 p

  4. Hypocrisy Thy Name says:

    جب انسان کا اللہ پر یقین اٹھ جاتا ہے تو وہ قسمت کے چکروں میں پڑ جاتا ہے ۔ کئی لوگ اس طرح اپنی تباہی کا سامان خود مہیّا کرتے ہیں ۔ مگر گمراہ عبرت نہیں پکڑتے ۔ قسمت اللہ تعالی نے انسان کے بس میں کرنے کا بندوبست کیا ہوا ہے ۔ یہ انسان کا کام ہے کہ وہ سارب کے پیچھے خوار ہونے کی بجاۓ ایسے طریقے اختیار کرے کہ قسمت اس کے بس میں آ جاۓ ۔ اللہ ہماری رہنمائی فرماۓ

  5. Anonymous says:

    umm kismat…ek dafa funfair mai haath dikaya tha…areay!weo wala haath nahi dhosray wala…tu dil rakhnay k liya buhat kuch kaha tha…..hehe lakin wasa hova nahi kuch..ek prediction thi…abbi ouss ka time nahi aya….

    maybe mai pakistan pay hakumat kar lo….:p

    miss mughal

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔