عبداللہ دیوانہ

Saturday,10 July 2010
از :  
زمرات : میری پسند, موسیقی

نوٹ : یہاں لفظ شادی استعمال کیا گیا ہے، اسے بلاگ سُنا اور سمجھا نہ جائے ۔
شادی کسی کی ہو دل اپنا گاتا ہے 😀

تبصرہ جات

“عبداللہ دیوانہ” پر 36 تبصرے کئے گئے ہیں
  1. عثمان says:

    اور دلچسپ بات ہے کہ پسن منظر میں جھاڑیاں بھی ہیں. 🙂

  2. عبداللہ says:

    مجھے میراثی بناتے بناتے آپ خود گانے بجانے میں لگ گئے!
    🙂
    ویسے میری مشہوری کے لیئے شکریہ!
    🙂

  3. جعفر says:

    وہ کہتے ہیں جی کہ بے شرمی کی حد ہوتی ہے
    بے غیرتی کی کوئی حد نہیں ہوتی۔۔۔
    ویسے بھی یہ غیرت وغیرہ انسانوں کے مسئلے ہیں
    بارہ سنگھوں کے نہیں۔۔۔

    • عبداللہ says:

      مسٹر جعفر تمھیں غیرت اور بے غیرتی کا فرق معلوم ہے؟؟؟؟؟
      تم تو اس طرح آپے سے باہر ہوئے ہو جیسے پچھلے جنم میں میں تمھارا ظالم مالک تھا جو تمھیں دن رات گاڑی میں جوتے چھترول سے تمھاری تواضع کیا کرتا تھا!!!!!!!
      D:

  4. هاها ها بهت اعلی!!!

  5. ہاہاہاہا

    عثمان آپ کا مشاہدہ کافی تیز ہے.. جھاڑیاں!!! ورنہ میں تو گانے میں کھو ہی گیا تھا.

  6. میں تو سمجھتا تھا صرف جھاڑیوں میں پھنسا ھوا ھے۔یہ تو بیٹھا ھے اور لڑکتا بھی ھے۔

  7. جعفر says:

    یار مجھے کوئی سمجھائے کہ آواگون پر ہندو یقین کرتے ہیں کہ مسلمان؟
    وہ اپنے دو منڈے ہیں بلو اور بلا۔۔۔
    انہوں نے کسی عبد اوم کا ذکر کیا تھا ایک دن
    وہ پتہ نہیں کیا چکر تھا؟

    • عبداللہ says:

      اسے کہتے ہیں کھسیانی بلی کھمبا نوچے!!!!!
      D:

    • آواگون پر یقین تو اوم کے پجاری ہی کرتے ہیں. اسلام میں تو کوئی ایسی گنجائش نہیں ہے. ویسے آپ کیوں پوچھ رہے ہیں؟

    • یہ کونسا والا چکر ہے؟

      • جہانزیب :: ایسا ہوا تھا کہ بلو بلا کے بلاگ پر کوئی بحث چھڑ گئی تھی. خود مجھے بھی اب یاد نہیں کہ وجہ آغاز بحث کیا تھی، مگر اس میں لطیفہ یہ ہوا کہ اپنے عبداللہ صاحب المعروف ——- اور ——- اور —– اور عبد اوم نے یہ نکتہ نکالا کہ خیر ہے آپ لوگ اعتراض کیون کر رہے ہیں، سنسکرت میں اوم خدا یا اللہ کے لئے ہی استعمال ہوتا ہے تو بلو بلا نے غالبا یہ کہا کہ اسی نکتے کی رو سے عبداللہ کو عبد اوم کہا جائے تو ان کو برا نہیں لگنا چاہئے.

        خیر کہا تو اور بہت کچھ جا سکتا ہے اس لطیف نکتے کی رو سے، مگر پھر کبھی. اور آج انھوں نے خود ہی کسی اور جنم کا ذکر کر کے بلو بلا کے نکتے کو اہمیت دے ڈالی ہے.

        :mrgreen:

  8. جعفر says:

    ڈاکٹر صاحب، آپ بات کا بتنگڑ بنادیتےہیں، جب کوئی دلیل نہیں ملتی تو آئیں بائیں شائیں کرنے لگتے ہیں، آپ ڈھیٹ بارہ سنگھوں کی طرح جھاڑیوں میں بار بارالجھتے ہیں، پر پھر بھی باز نہیں آتے۔
    تعصب کی پٹی۔۔۔۔ کراچی ۔۔۔ پنجاب۔۔۔۔ تنگ نظر۔۔۔ پختون دہشت گرد۔۔۔ پنجابی طالبان۔۔۔

    • عبداللہ says:

      چچ چچ چچ،تمھیں اور ڈاکٹر صاحب دونوں کو نفسیاتی علاج کی سخت ضرورت ہے جلد ہی کروا لو اس سے پہلے کہ ناقابل علاج ہوجاؤ!!!!!!!!
      D:

  9. عثمان says:

    معلوم ہوتا ہے کہ بارہ سنگھے نے یہاں بھی co-blogging بلاگنگ شروع کردی ہے. 🙂

  10. شازل says:

    اف یہ کیا ہورہا ہے

  11. بدتمیز says:

    یار کمال آواز ہے۔ میں کل سے سنی جا رہا ہوں۔ بے حد خوبصورت آواز ہے۔ سنگرز کون ہیں اس گانے کے؟

    • جعفر says:

      اس دوگانے کو گایا ہے
      بارہ سنگھے اور آنٹی زریں نے (وہی اقوال زریں والی)

    • فلم کا نام ہے، جس دیس میں گنگا بہتی ہے .
      گلوکار ہیں لتا منگیشکر اور مکیش جی .
      بول لکھے ہیں شنکر داس کیسری لعل نے .

      اب یہ سب گانے سے پہلے یوں پڑھا جائے جیسے W11 میں ہر گانے سے پہلے اس کا تعارف ہوتا ہے . پر آپ نے تو کراچی دیکھا ہی نہیں تو W11 کا کیسے پتہ ہو گا؟

  12. عبداللہ تم انکی باتوں سے يہ نہ اندازہ لگا لينا کہ ُہم ` سب ہی ايسے الٹے پھلٹے ہيں ہمارے ہاں ان مردوں کے مخالف خصوصيات رکھنے والے مرد بھي پائے جاتے ہيں لاکھوں ميں ايک عدد

    • عبداللہ says:

      اسماء آپ فکر نہ کریں میرا ذاتی تجربہ بھی ان لوگوں سے خاصا مختلف ہے،میرے ملنے والوں میں بے حد مہذب اور سمجھدار پنجابی بھی پائے جاتے ہیں جو نہ تو چیزوں کو سطحی نظر سے دیکھتے ہیں اور نہ ہی محض بغض معاویہ میں بات کرتے ہیں آخر یوں ہی تو پنجاب سے رشتہ داریاں قائم نہیں کی ہوئی ہیں!
      ؛)
      ویسے لاکھوں میں ایک والی بات تھوڑی زیادتی نہیں ہوگئی؟ اچھے برے لوگ تو ہر کمیونٹی میں ہوتے ہیں ہم بھی ایسے لوگوں میں خود کفیل ہیں!
      🙂

      • شکریہ عبداللہ، یہی بات میری پچھلی تحریر کا مرکزی خیال تھا کہ اچھے برے انسان ہر جگہ پائے جاتے ہیں . کاش میں بھی اسماء ہوتا کہ میری بات آپ کی سمجھ میں بھی اتنی آسانی سے آ جاتی .

        • عبداللہ says:

          بات میری سمجھ میں تو آسانی سے آگئی تھی مگر لگتا ہے آپکو میری بات سمجھنے میں کافی دقت ہوئی،اور آپ اسماء نہیں ہوسکتے کیونکہ وہ میری بات سمجھتی ہیں!
          🙂

  13. سب احباب کا بہت بہت شکریہ، صرف دو افراد نے ہی شائد گانا سنا ہے اور اس کی تعریف کی ہے . میں حیران ہوں کہ اس بلاگ پر پہلے آغاز ہی سے موسیقی کا زمرہ موجود ہے، مگر جو پذیرائی اس ویڈیو کو ملی ہے کسی اور کے حصہ میں کبھی نہیں آئی . عبداللہ صاحب کا گمان درست معلوم ہوتا ہے کہ شائد اس مشہوری میں ان کا ہاتھ ہو . اس لئے ان کا ڈبل شکریہ .

  14. ہاہاہاہا ۔۔۔۔ گانا تو میں نے نہیں سنا برادر، لیکن آپ نے جو کیپشن لگایا ہے وہ سو سنار کی اور ایک لوہار کی ہے ۔۔۔ بہت خوب!

    • فہد بھائی میں نے بطور خاص لکھا ہے کہ شادی سنا اور سمجھا جائے، لیکن سب اسے بلاگ ہی سمجھ رہے ہیں . سیاق و سباق کو نظر انداز کر دیا سب نے 😀

  15. عبداللہ says:

    جہانزیب لگتا ہے اپنے ساتھ ساتھ آپنے اور بہت سے لوگوں کے کلیجے وچ ٹھنڈ پا دی اے!
    :)،:)،:)

    • بس یار موسم گرم ہے نہ، میں نے سوچا ثواب ہی کما لیں . اب بس کرو کتنی دفعہ میرے بلاگ پہ آ کر یہ سنتے رہیں گے، یو ٹیوب سے سدھا ڈاؤن لوڈ کر لو سرکار .

  16. یار یہ میں آج خود ہی جہانزیب کا بلاگ ڈھونڈتے یہاں نہ آ جاتا تو اس شاہکار پوسٹ کو نہ دیکھ پاتا۔

    یعنی کمال کی سلاست ، تلخیص اور دریا کو کوزے میں بند کیا ہے کہ لوگ بغیر گانے سنے ہی موسیقی سے لطف اندوز ہو رہے ہیں۔ قسم سے میں نے بھی پلے کر کے نہیں دیکھا مگر جتنا مزہ اس گانے کا آیا ہے کم ہی کسی گانے کا آیا ہے۔

    جہانزیب ، بھاءی یہ اکیلی پوسٹ ہی تمہیں اس سال بہترین بلاگر کا ایوارڈ جتوانے کے لیے کافی ہے۔

    یعنی آفت پوسٹ ہے اور قیامت کی کوڑی لائے ہو

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔