افواہ سازی/ فراڈ

Sunday,15 April 2007
از :  
زمرات : پاکستان, متفرق

میں افواہوں پر اتنے کان نہیں دھرتا، اس ہفتے پاکستان میں موبائل فون کے حوالے سے جو نوٹنکی بازی ہوئی ہے جو  افواہ سے زیادہ ایک بھونڈا مذاق تھا (اِس بارے میں انشااللہ بعد میں تحریر کروں گا)، لیکن لوگ اِن باتوں کو اتنا سنجیدگی سے لیتے ہیں؟ مجھے ایک اور فراڈ یاد دِلا دیا ہے جو اِس سے بھی بھیانک ہے ۔ اگر کوئی اِس بارے میں پڑھے تو آئندہ وہ اِس چکر میں نہیں آئے ۔

آپ لوگوں کو بھی بہت فضول (جنک) ای میلز آتی ہوں گی، کہ افریقہ میں یا  دُنیا میں کہیں بھی فلاں ابن فلاں مر گیا ہے اُس کے اثاثے اتنے ہیں اور اُس کی وصیت تھی کہ دُنیا میں اہل لوگوں کو ڈھونڈ کر اُن میں تقسیم کر دی جائے، آپ کا نام بھی اُن خوش قسمت لوگوں میں ہے وغیرہ وغیرہ ۔ ۔ ۔
اِن تمام ای میلز کا متن مختلف ہو سکتا ہے مگر بات ایک ہی کی گئی ہوتی ہے کہ ہمارے پاس آپ کے اتنے پیسے نکلتے ہیں آپ وہ لے لیں، اِسی طرح کی ایک ای میل میں ڈاکٹر قدیر خان صاحب کا نام لے کر بھی یہ کام کیا جا چُکا ہے کہ اٹیمی راز دینے کے عوض جو دولت اُنہیں حاصل ہوئی وہ اُسے استعمال نہیں کر سکتے تو اب آپ کو وہ حکومت سے چوری چھپے دے رہے ہیں ۔ ۔

لیکن امریکہ میں ایسی صرف ای میلز ہی نہیں بلکہ ڈاک بھی آتی ہے، ای میل پر تو شائد لوگ اتنی توجہ نہیں دیتے جتنی آپ کے گھر آپ کے نام ڈاک آنے پر دیتے ہیں، جو لوگ امریکہ میں کافی عرصے سے مقیم ہیں اُنہیں تو یہ بات معلوم ہے اور وہ صرف وہی خط کھولتے ہیں جو اُن کے کسی بینک، کریڈٹ کارڈ یا ایسی جگہ سے ہو جو وہ جانتے ہیں، دوسرے خطوط بغیر دیکھے ہی پھینک دئے جاتے ہیں ۔ تو ایسی ہی ایک ڈاک آتی ہے کہ آپ برازیل میں اتنے لاکھ کی لاٹری جیت گئے ہیں (وہ لاٹری جو آپ نے کھیلی نہیں ہوتی ) نیچے نمبر دیا ہوتا ہے کہ یہاں کال کریں اور اپنی انعامی رقم حاصل کریں ۔

اُوپر دی گئی دونوں مثالیں ایک ہی سلسلے کی کڑی ہیں ۔ یہاں تک تو سب کو معلوم ہے، اِس سے آگے کیا ہوتا ہے ؟؟؟؟؟ 

یامین صاحب (نام بدل دیا گیا ہے ) بروکلین نیویارک میں رہتے ہیں، پیسے کا اُن کو بہت کریز ہے ۔ انہیں بھی یہ خط آ گیا، لوگوں نے بُہتیرا سمجھایا کہ چھوڑیں یہ ایویں ای فضول چیز ہے، جھوٹ ہے سب، مگر وہ انسان میں ایک تجسس ہوتا ہے وہ نہیں جاتا ۔ تو انہوں نے وہاں فون لگا دیا، وہاں کال کرنے کے بعد اُن سے اُن کا بینک اکاؤنٹ مانگا گیا جہاں پیسوں کی ترسیل وہ چاہتے تھے ، بینک اکاؤنٹ دینے سے کیا ہوتا ہے انہوں نے دے دیا۔  بعد میں اُنہیں کہا گیا کہ پیسوں کی ترسیل چونکہ برازیل سے امریکہ ہونا ہے، اِس لئے اِس کا کچھ خرچ ہو گا جو آپ کو پہلے ادا کرنا پڑے گا۔۔ اِسی دوران وہ یامین صاحب کو اِتنا چونا لگا چُکے تھے کہ انہوں نے نہ صرف ہاں کی بلکہ اُس پیسے کو حاصل کرنے کے چکر میں اُلٹا ۵۰۰۰ ڈالر انہیں بھجوا بھی دیے۔ بعد میں جب چھ ماہ تک بھی کچھ ہاتھ نہیں آیا تب واویلا مچانے لگے ۔ ۔

بعین یہی کہانی ایک اور پاکستانی رضوان جو کہ نیو جرسی میں رہتے ہیں اُن کے ساتھ ہوئی اور وہ ۲۰۰۰ ڈالر انہی چکروں میں گنوا بیٹھا، لیکن ایک تیسرا شخص جسے میں نے بچتے دیکھا ہے وہ میرے باس کا بھائی تھا اسرائیل سے نیا نیا آیا تھا اور ایک دن ہاتھ میں خط لئے آ گیا کہ اِس کا کیا مطلب ہے؟ میں نے پڑھ کر کہا کہ فراڈ ہے، یہ تم سے اکاؤنٹ نمبر لیں گے وغیرہ وغیرہ، اُس وقت مجھے خود اصل کھیل کا نہیں پتہ تھا، بس سُنی سنائی باتیں تھیں کہ فراڈ ہوتا ہے ۔۔ خیر اُس کی گرل فرینڈ پیرو سے تھی تو اُس نے اُس کے ذریعے وہاں کال کروائی اور جب اُنہوں نے خرچ کی مد میں پیسوں کا کہا تو یہ باز آ گیا اور اُلٹا کہنے لگے کہ جو پیسے تم بھیج رہے ہو اُن میں سے نکال لو ۔ ۔ ۔

اب پتہ نہیں کہ ہمارے کتنے پاکستانی اِن ای میلز اور خطوں کے ہاتھوں بے وقوف بن کر ذلیل ہو چُکے ہیں ۔ ۔ ۔

یہاں میں ایک اور واقعہ جو تھوڑا مختلف نوعیت کا ہے مگر پیسے نکلوانے کا انداز بالکل یکساں ہے ۔ یہ چھ مہینے پہلے میرے دوست کے بھائی کے ساتھ بیت چُکا ہے اور ہم سب نے مشورہ کر کے اپنی طرف سے تحقیق کر کے پیسے بھیجے تھے ۔ پاکستان میں لوگوں کو باہر نوکری کرنے کا بہت شوق ہوتا ہے ، میرے دوست کے بھائی نے نیٹ ورکنگ انجیرنگ کی ہے اور ابھی اسلام آباد میں کوئی سرکاری نوکری کر رہا ہے ۔ جب طالب علم نئے نئے یونیورسٹی سے باہر آتے ہیں تو اُنہیں ہوتا ہے کہ ہر جگہ نوکری کے لئے اپلائی کرو۔ انٹرنیٹ نے باہر کے دروازے بھی کھول دئے ہیں اور لوگ اپنی قسمت آزماتے رہتے ہیں ۔ ۔  تو اُس کو نائجیریا سے ایک نوکری کی پیشکش موصول ہو گئی اور تنخواہ بھلا کتنی ؟ دو لاکھ امریکن ڈالر ماہانہ ۔ ۔ جب میرے دوست نے مجھ سے مشورہ مانگا تو میں نے جھٹ سے کہا یہ ہو ہی نہیں سکتا اور فراڈ ہے ۔ ۔ اُن سے ای میلز کا تبادلہ کیا گیا پھر اسلام آباد سے بتائی گئی کمپنی کے نام کی نائجیریا کی ایمبیسی سے معلومات لی، جو کہ بیان کی گئی معلومات سے بالکل مطابقت رکھتی تھیں ، اتنی دیر میں تمام مطلوبہ دستاویزات کا تبادلہ بھی ہو چکا تھا، تب ہمیں لگا کہ واقعی یہ صیح  ہوں ۔ ۔ویزہ لگ گیا سب کچھ ہو گیا اور یہ تک پوچھ لیا گیا کہ بھائی آپ لوگوں کا دماغ خراب ہے جو اتنی ماہانہ تنخواہ دے رہے ہو، تو اِس کا جواب یہ مِلا کہ جہاں یہ نوکری ہے ایک تو علاقہ دور دراز ہے دُوسرا وہاں مقامی قبائل کی وجہ سے کچھ خطرناک بھی ہے ، اِس لئے اتنی پُرکشش مراعات دی جا رہی ہیں ۔ ۔  خیر اخیر وہی ۵۰۰ ڈالر فلاں خرچ کی مَد میں چاہیے ہیں ۔ اور اتنے عرصے میں بندہ اتنا پکا ہو چکا ہوتا ہے کہ وہ کہتا ہے " جی یہ لیں پیسے " اور بعد میں وہ بھی صرف ایک کاغذی کمپنی نکلی، جِس کا کاغذوں میں تو سب کام مکمل تھا مگر زمین پر کہیں موجود نہیں تھی ۔ ۔

پہلے میں سمجھتا تھا کہ لاکھوں میں ایک اِن کے جھانسے میں آتا ہو گا مگر موبائل فون کی افواہوں نے مجھے پریشان کر دیا اور میں نے کہا اِس پر بھی کچھ لکھ دوں، اگر پڑھنے والوں میں سے کوئی اِس چکر میں پھنس رہا ہو یا پھنسا ہوا ہے تو جب بھی کسی خرچ کی مَد میں کوئی آپ سے پیسے مانگے فوراً اُلٹے قدموں واپس ہو جائیں ۔

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔