فریڈم ٹاور

Monday,11 September 2006
از :  
زمرات : نیو یارک, متفرق, امریکہ

آج نو گیارہ ۲۰۰۱ کو پورے پانچ برس ہو گئے ہیں، اب ہر سال ستمبر میں ٹی وی پر اِس طرح کے مباحثے شروع ہو جاتے ہیں کہ آیا اب ہم دہشتگردوں سے محفوظ ہیں کہ نہیں، جِس کا عموماً جواب یہی ہے کہ ہم پہلے سے بہت محفوظ ہیں لیکن بالکل محفوظ نہیں کیونکہ ابھی بھی دہشت گرد اپنے منصوبے بنا رہے ہیں جو کہ پکڑے جا رہے ہیں وغیرہ وغیرہ۔
نو گیارہ کے بعد دُنیا میں کیا حالات ہوئے، کیا واقعات رُونما ہوئے اِسکے بارے میں مختلف آراء ہو سکتی ہیں، اور سب فریق اِس پر بڑھ چڑھ کر دلیلیں بھی دیتے ہیں ، لیکن میرا اِس بارے میں بات کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے بلکہ ہر سال ستمبر شروع ہوتے ہی نیویارک میں ایک نئی بحث کا آغاز ہو جاتا ہے کہ آیا سابقہ ورلڈ ٹریڈ سینٹر کی جگہ کوئی اور عمارت کھڑی کرنی چاہیے کہ نہیں؟
اب جبکہ فریڈم ٹاور کا منصوبہ بن چُکا ہے اور ۲۰۱۱ یا ۲۰۱۲ کے آغاز تک تکمیل تک پہنچ جائے گا،جو لوگ ٹاور کی تعمیر کے حق میں ہیں اُن کا کہنا ہے کہ ورلڈ ٹریڈ سینٹر امریکہ کی طاقت یا pride کا نشان تھا اور اُسے دوبارہ تعمیر کر کے ہم دہشت گردوں کو بتا سکتے ہیں کہ ہم اِس حادثے کے بعد دوبارہ سے کھڑے ہو گئے ہیں، جبکہ مخالفت کرنے والوں میں زیادہ تر وہ لوگ شامل ہیں جِن کے عزیز و اقارب اُس حادثے کی نظر ہو گئے تھے اور اُن کے نزدیک سابقہ ورلڈ ٹریڈ سینٹر کی جگہ عمارت کھڑی کرنا ایک قبرستان پر عمارت کھڑی کرنے کے مترادف ہے، اِس کی بجائے وہ گراؤنڈ زیرو پر ایک میموریل بنانے کے حق میں ہیں، جہاں تمام مرنے والوں کے نام کنندہ ہوں۔
فریڈم ٹاور میں اِس بات کا خاص خیال رکھا گیا ہے، فریڈم ٹاور بنیادی طور پر پانچ ٹاور ہوں گے جن میں سے سب سے اونچے ٹاور کی اونچائی ۱۷۷۶ فُٹ ہو گی، اِن پانچ ٹاور کو سابقہ ورلڈ ٹریڈ سینٹر کے دونوں ٹاورز کی اِرد گِرد تعمیر کیا جائے گا اور پرانے ٹاورز کی جگہ ایک میموریل بنایا جائے گا(جو اِس وقت تکمیل کے مراحل میں ہے) جہاں پر تمام مرنے والوں کے نام اور عمریں درج کی جائیں گی، تمام ناموں کو اِس وقت الفابیٹ کے حساب سے لکھا جائے گا جبکہ کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ انہیں ورلڈ ٹریڈ سینٹر کے فلور نمبر کے حساب سے لکھا جائے۔
تعمیر کے بعد فریڈم ٹاور امریکہ کی سب سے اونچی عمارت ہو گی جو اِس وقت شکاگو کے سیرز ٹاور ہیں، اور اُن کا رنگ ہلکا سبزی مائل ہے اگر زندگی رہی تو ایک میگا پراجیکٹ بلڈنگ کی تعمیر کا میں عینی شاہد ہوں گا۔ آج نیویارک میں مین ہیٹن کے نچلے علاقے میں رَش معمول سے زیادہ تھا، دِن کا آغاز صدر بُش کے میموریل پر پھول چڑھانے سے ہوا، پھر گورنر، سینٹرز اور میر کی تقریریں، مطلب اِن تمام لوگوں کی موجودگی میں سیکورٹی بھی خاصی سخت تھی، اِس کے علاوہ نیویارک کے اطراف میں دونوں ہائی ویز بند تھیں اور کافی مین سڑکیں بھی بند تھیں، تو لوئز مین ہیٹن جانا ۴أ۵ گھنٹے سے کم نہیں ہوتا

تبصرہ جات

“فریڈم ٹاور” پر ایک تبصرہ ہوا ہے
  1. iCheetah says:

    مجھ کو بھی تو لفٹ کرادے
    نہ ای میل کا جواب ، نہ آف لائن میسج کا جواب ، لگتا ہے کہ کچھ نہ کچھ ہو گیا ہے جو ہمیں توجہ سے محروم رکھا جا رہا ہے

تبصرہ کیجئے

اس بلاگ پر آپ کے تبصرہ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے
اگر آپ اپنے تبصرہ کے ساتھ تصویر لگانا چاہتے ہیں، تو یہاں جا کر تصویر لگائیں ۔